مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصرعباس جعفری اور اراکین مرکزی کابینہ علامہ امین شہیدی ،علامہ شفقت شیرازی،علامہ حسن ظفرنقوی، علامہ اعجاز بہشتی،علامہ احمد اقبال رضوی او رابوذرمہدوی، ناصرشیرازی ،صوبائی سیکریٹری جنرل پنجاب علامہ عبدالخالق اسدی، سیکریٹری جنرل سندھ علامہ مختارامامی،سیکریٹری جنرل خیبر پختونخواعلامہ سبطین حسینی، سیکریٹری جنرل گلگت بلتستان علامہ شیخ نیئر عباس، سیکریٹری جنرل بلوچستان علامہ مقصودڈومکی اور سیکریٹری جنرل ریاست جموں کشمیرعلامہ تصور جوادی نے ایم ڈبلیوایم شعبہ قم المقدس کی سیکریٹری جنرل علامہ ڈاکٹرشیخ غلام محمد فخر الدین کی سانحہ منیٰ میں المناک شہادت پر اپنے مشترکہ بیان میں دلی رنج وغم اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا

کہ علامہ فخرالدین کی شہادت نا فقط اہل بلتستان بلکہ پوری ملت تشیع کا عظیم نقصان ہے،علامہ فخر الدین کی شہادت سے ملت تشیع ایک بڑے مدبر،شجاع ، نڈر، خطیب بے مثال اور مدافع ولایت سے محروم ہوگئی ہے، شہید کی پوری زندگی جہد مسلسل سے عبارت تھی، عہد شباب سے ہی شہید نے انقلاب اسلامی او رمقام معظم رہبری کی عملی اتباءاو ر پیروی کا آغاز کیا،ملک کے گوش وکنار میں حقیقی نظام ولایت کی سفیر بن کر گئے،یہاں تک کہ حج بیت اللہ کے موقع پر بھی وہ اپنی شرعی ذمہ داریوں سےکما حقہ عہدہ برآں ہوتے رہے ،دوران حج حکم امام خمینی کی تعمیل میں خود بھی برائت ازمشرکین کیلئے صف اول میں دکھائی دیتے بلکہ دیگر حجاج کو بھی اس عمل خیر کی تاکید کرتے،شہید کی غریب الوطنی اور دیار غیر میں شہادت پوری امت مسلمہ بالعموم اور مجلس وحدت مسلمین کیلئے بالخصوص بار گراں ہے،آغائے فخر الدین جیسے گوہر نایاب صدیوں میں جنم پاتے ہیں،اس عظیم سانحے پر ہم امام زمانہ عج، رہبر معظم انقلاب اور شہید خانوادے کی خدمت میں ہدیہ تعزیت اور تسلیت عرض کرتے ہیں ،ساتھ ہی پسماندگان کیلئے اس دکھ اور الم کی گھڑی میں خداسے خصوصی صبر جمیل کی دعا کرتے ہیں ، خدا ہمیں شہید کے مشن کی تکمیل کی توفیق عنایت فرمائے۔