سلامی جمہوری ایران میں گذشتہ شب مجلس وحدت مسلمین شعبہ قم ایران نے یوم القدس اور جمعۃ الوداع کے موقع پر افطاری اور ایک تحلیلی نشست کا اہتمام کیا۔ حالات حاضرہ کی تحلیلی نشست سے خطاب کرتے ہوئے حجۃ الاسلام ڈاکٹر سيد شفقت حسين شيرازی مسئول امور خارجہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان نے کہا کہ  مردہ باد امریکہ کا نعرہ ہم نے حضرت امام خمینی اور قائد شہید عارف حسینی سے سیکھا ہے۔ آج اگر پاکستان کے ایوانوں میں مردہ باد امریکہ کی بازگشت سنائی دے رہی ہے تو یہ حضرت امام اور قائد شہید کے نظریاتی فرزندوں کی فتح ہے۔

تفصیلات کے مطابق انہوں نے ابتدا میں مسئلہ فلسطین کے پسِ منظر پر روشنی ڈالی۔ ان کے مطابق آج استعماری اور قابض طاقتیں فلسطینیوں کو ظالم جبکہ قابض صہیونیوں کو  مظلوم بنا کر پیش کر رہی ہیں۔ اُن کا کہنا تھا کہ حضرت امام خمینی کی بصیرت اور اسلامی انقلاب کے ثمرات کی وجہ سے یہ مسئلہ آج تک دبنے نہیں پایا۔

انہوں نے پاکستان میں استعمار شناسی اور مردہ باد امریکہ کے حوالے سے آئی ایس او پاکستان کی شاندار تاریخ کا ذکر بھی کیا۔ اس موقع پر انہوں نے مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ حجۃ الاسلام علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا بھی ذکر کیا۔ ان کے مطابق موجودہ صورتحال میں مجلس وحدت کے سربراہ نے قائد شہید کے افکار و نظریات کے عین مطابق بصیرت اور دوراندیشی پر مبنی کردار ادا کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ علامہ راجہ ناصر عباس نے شجاعت اور جرات کے ساتھ پاکستان میں بیرونی مداخلت اور پاکستان کی آزادی و خود مختاری کے لئے ٹھوس موقف اختیار کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ  امریکہ اور استعمار کے خلاف جو آواز پہلے صرف انقلابی طبقے کی آواز تھی، آج وہ پورے پاکستان کی آواز بن چکی ہے۔ ان کے مطابق ہمیں عمران خان کی مخالفت کی وجہ سے امریکہ کی دشمنی ترک نہیں کرنی چاہیئے۔ عمران خان اور پاکستانی عوام کے امریکہ کے خلاف جو بھی اقدامات ہیں، انہیں سراہا جانا چاہیئے اور اس عوامی لہر کو  قومی شعور میں تبدیل کرنا چاہیئے۔