مجلس وحدت مسلمین پنجاب کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ عبدالخالق اسدی نے متحدہ علماء بورڈ میں شیعہ مسلک کے ساتھ ہونے والی ناانصافیوں پر سیکرٹری اوقاف کو خط لکھ دیا ہے. خط کے متن میں متحدہ علماء بورڈ میں شیعہ مسلک کے علمائے کرام کی تعداد سابقہ روایات کے برعکس پچاس فیصد کم کر دینے پر تشویش کا اظہار کیا گیا ہے. اس خط میں علامہ عبد الخالق اسدی نے سیکرٹری اوقاف سے مطالبہ کیا ہے کہ شیعہ مسلک کے علمائے کرام کی تعداد فوری طور پر دوسرے مسالک کے علمائے کرام کی تعداد کے برابر کی جائے. انہوں نے ناانصافی کے اس معاملے پر فوری طور پر کمیٹی تشکیل دے کر شیعیان حیدر کرّار سے ناروا سلوک کرنے والے محکمہ اوقاف کے افراد کا تعین کر کے تادیبی کاروائی کرنے کا بھی مطالبہ کیا ہے. یاد رہے کہ متحدہ علماء بورڈ کے گزشتہ سیشنز میں تمام مسالک سے چار چار علماء کو مسلکی نمائندہ کے طور پر شامل کیا گیا تھا تاہم علماء بورڈ میں متعصب چیئرمین کی تقرری کے بعد دیوبند علماء کی تعداد بڑھا کر دس، اہل سنت بریلوی علماء کی تعداد نو، اہل حدیث علماء کی تعداد چھ اور شیعہ علماء کی تعداد پانچ ہی رکھی گئی ہے. ملت جعفریہ پاکستان اس ناانصافی پر پنجاب انتظامیہ اور سیکرٹری محکمہ اوقاف سے سخت ناراض ہیں اور فوری طور پر اس عمداً غلطی کے ازالہ کا مطالبہ کر رہے ہیں.

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں